کانگریس 2023 کا الیکشن کمل ناتھ کی قیادت میں لڑے گی، اپوزیشن بی جے پی کو گھیرنے کی تیاری کر رہی ہے۔

بھوپال۔ مدھیہ پردیش کانگریس نے کہا ہے کہ پیر کو ریاست کے سینئر پارٹی لیڈروں کی میٹنگ میں ریاستی کانگریس صدر اور ریاست کے سابق وزیر اعلیٰ کمل ناتھ پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا گیا اور ان کی قیادت میں اسمبلی انتخابات لڑنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ریاست میں اگلے سال نومبر میں منعقد ہوا۔ اتفاق رائے سے لیا گیا۔ پارٹی کی طرف سے پیر کی رات یہاں جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے، ’’مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے سینئر لیڈروں اور سابق وزراء کی ایک انتہائی اہم میٹنگ آج ریاستی کانگریس صدر کمل ناتھ کی رہائش گاہ پر ہوئی۔ میٹنگ میں سبھی لیڈروں نے متفقہ طور پر کہا کہ کمل ناتھ کو 2023 کے اسمبلی انتخابات میں کانگریس پارٹی کی قیادت کرنی ہے۔ کانگریس لیڈر اور سابق مرکزی وزیر ارون یادو نے ٹویٹ کیا، “آج مدھیہ پردیش کانگریس کمیٹی کے صدر کمل ناتھ جی کی صدارت میں ایک بہت اہم میٹنگ بلائی گئی۔ کانگریس پارٹی 2023 کے اسمبلی انتخابات راہل گاندھی جی اور کمل ناتھ جی کی قیادت میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی غلط حکمرانی کے خلاف لڑے گی۔” بھانوٹ نے مختلف مسائل پر روشنی ڈالی۔ پٹواری نے کہا کہ ریاست میں معاشی انارکی ہے اور سماج میں ہم آہنگی کا فقدان ہے، جس میں کسان اور نوجوان مشکلات کا شکار ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس مدھیہ پردیش اسمبلی انتخابات 2023 میں شیوراج سنگھ چوہان کی قیادت والی حکومت کی بدانتظامی، بدعنوانی، کسانوں کی پریشانی اور دیگر معاشی اور سماجی مسائل پر لڑے گی۔ تیار کیا گیا ہے اور جلد ہی ریاست کے عوام دیکھیں گے کہ کانگریس پارٹی کس طرح سڑک سے اسمبلی تک پوری ریاست میں عوام کے مسائل پر عوامی تحریک کھڑی کرے گی۔ ساتھ ہی بھانوٹ نے کہا کہ مدھیہ پردیش کی معاشی حالت بہت خراب ہو گئی ہے۔ ریاست پر 4 لاکھ کروڑ روپے کا قرض ہے۔ ایسے میں ڈیزل، پیٹرول، گیس، بجلی اور ہر طرح کی مہنگائی ریاست کے عوام پر مسلط کی جارہی ہے۔ شیوراج کی قیادت والی حکومت پوری طرح سے عوام مخالف ہو چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میٹنگ میں فیصلہ کیا گیا ہے کہ کانگریس پارٹی مہنگائی، کسان اور بے روزگاری کے مسئلہ پر عوام کو بڑے پیمانے پر آگاہ کرے گی۔ پارٹی کے سینئر لیڈر ڈگ وجے سنگھ، سریش پچوری، کانتی لال بھوریا، اجے سنگھ، ارون یادو، این پی پرجاپتی، حنا کاورے اور کئی سابق وزراء نے میٹنگ میں شرکت کی۔