موربی واقعہ پر راہل نے بی جے پی کو گھیر لیا، کہا ذمہ داروں کے خلاف کچھ نہیں ہوا۔

گجرات میں کانگریس کے سابق صدر راہل گاندھی نے آج پارٹی کے لیے انتخابی مہم چلائی۔ اس دوران راہول گاندھی نے نہ صرف نوجوانوں اور کسانوں کا مسئلہ اٹھایا بلکہ موربی واقعہ کو لے کر بی جے پی حکومت کو بھی سخت نشانہ بنایا۔ انہوں نے کہا کہ بی جے پی نے اپنے لوگوں کو بچانے کی کوشش کی ہے۔ ذمہ داروں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں کی گئی۔ راہول گاندھی راجکوٹ میں ایک انتخابی ریلی سے خطاب کر رہے تھے۔ اس دوران انہوں نے موربی کا مسئلہ اٹھایا۔ دراصل گزشتہ دنوں موربی میں پل گرنے کا واقعہ پیش آیا تھا۔ اس میں 130 سے ​​زیادہ لوگ مارے گئے۔ اس کے بعد سے کانگریس اور عام آدمی پارٹی نے بی جے پی حکومت پر سخت نشانہ لگایا تھا۔ آج ایک بار پھر انتخابی مہم کے دوران راہل گاندھی نے یہ مسئلہ اٹھایا ہے۔ خبر رساں ایجنسی اے این آئی کے مطابق راہل گاندھی نے کہا کہ موربی حادثے میں 150 لوگوں کی موت ہوئی ہے۔ یہ کوئی سیاسی مسئلہ نہیں ہے۔ سوال یہ پیدا ہوتا ہے کہ یہ کام کرنے والوں کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوئی، ایف آئی آر درج نہیں ہوئی۔ اس کے ساتھ ہی راہل نے کہا کہ ان کے بی جے پی کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں، تو کیا انہیں کچھ نہیں ہوگا؟ چوکیداروں کو پکڑ کر اندر کر دیا۔ ذمہ داروں کے خلاف کچھ نہیں ہوا۔ اس سے پہلے راہل نے ایک جلسہ عام میں نوجوانوں، کسانوں اور قبائلیوں کا مسئلہ اٹھایا تھا۔ انہوں نے کہا تھا کہ کورونا کے دور میں بہت سے لوگوں نے اپنے خاندانوں کو کھو دیا ہے، جس میں بی جے پی حکومت کی غفلت اور ناکامی کو نظر انداز نہیں کیا جا سکتا۔ راہل نے کہا کہ یہ ملک قبائلیوں کا ہے اور اس ملک میں آپ کو حقوق ملنا چاہیے، آپ کو روزگار ملنا چاہیے، آپ کے بچوں کو صحت اور تعلیم ملنی چاہیے۔ انہوں نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں کہ قبائلیوں کی تاریخ اور طرز زندگی کا تحفظ کیا جائے۔ ہمارا اور حکومتوں کا کام آپ کی آواز سننا ہے۔ راہل گاندھی نے کہا تھا کہ بی جے پی آپ کو قبائلی نہیں کہتی، وہ آپ کو جنگل میں رہنے والے کہتے ہیں، وہ یہ نہیں کہتے کہ آپ ہندوستان کے پہلے مالک ہیں، بلکہ وہ کہتے ہیں کہ آپ جنگل میں رہتے ہیں، اس کا مطلب ہے کہ وہ نہیں چاہتے کہ آپ جیو۔ شہروں میں رہو اور تمہارے بچے انجینئر، ڈاکٹر وغیرہ بنیں۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *