ملک کی پوری ترقی وزیراعظم‘ وزیراعلیٰ کی قیادت میں ہورہی ہے۔

وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی نے اتوار کی شام رینجرز گراؤنڈ میں منعقدہ اتراکھنڈ عوامی ورثہ پروگرام – 2022 میں شرکت کی۔ وزیر اعلیٰ نے میلے میں سیلف ہیلپ گروپس کے اسٹالز کا دورہ کیا اور ان کی جانب سے تیار کردہ مصنوعات کو سراہا۔ اس موقع پر وزیر اعلیٰ نے کہا کہ ہمارے اتراکھنڈ میں مختلف قسم کی ثقافت ہے، ہر ضلع میں ثقافت اور رسم و رواج بدلتے رہتے ہیں، لیکن یہ لوک ورثہ پروگرام چھوٹے اتراکھنڈ کی ایک دلکش شکل ہے، جو ریاست کے مختلف رقص کے لیے مشہور ہے۔ یہ انداز، زبان اور گانے کے انداز کو دکھا کر ہمیں فخر کر رہا ہے۔ اس تقریب کے لیے ڈاکٹر کے پی جوشی سے اظہار تشکر کرتے ہوئے وزیر اعلیٰ نے ان کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ ہم سب کو اپنی ثقافت اور اپنے اسلاف کے بنائے ہوئے اپنے سنسکار سے جڑنا چاہیے کیونکہ تاریخ گواہ ہے جو لوگ اپنی ثقافت سے دور ہو جاتے ہیں وہ ایک درخت کی مانند ہیں جو ایک درخت ہے لیکن جس کی جڑیں خوشیاں ہیں وہ ختم ہو چکا ہے۔ آہستہ آہستہ وہ درخت بھی سوکھ جاتا ہے۔ اس لیے اگر ہم سب اپنی ثقافت سے جڑے رہیں گے تو ہم سب کو پرورش، توانائی اور حوصلہ ملتا رہے گا، اسی طرح ہمارے اسلاف کو بھی فیض ملتا رہے گا۔ ان سب باتوں کو ذہن میں رکھتے ہوئے، ہم نے اس بار آئیگاس کا تہوار بڑی دھوم دھام سے منایا۔ یقیناً ہماری ثقافت ایسی کوششوں سے نسل در نسل منتقل ہوتی رہے گی۔ ایسے تہواروں سے نئی نسل بھی کہیں نہ کہیں اپنا تعلق محسوس کرتی ہے۔ وزیر اعلیٰ نے کہا کہ وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی کال پر ملک بھر میں آزادی کا امرت مہوتسو منایا جا رہا ہے۔ یہ امرت مہوتسو آزادی سے پہلے اور آزادی کے بعد ملک کی کامیابیوں کو یاد کرنے کا تہوار ہے جنہوں نے ملک کے لیے اپنا حصہ ڈالا۔ اب ہم آزادی کی صدی کی طرف بڑھ رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم جناب نریندر مودی کی قیادت میں اتراکھنڈ کی ثقافت کی ترقی کے لیے کئی اسکیمیں چلائی جا رہی ہیں۔ تباہی کے بعد کیدارناتھ دھام کو دوبارہ تعمیر کیا گیا ہے، پورے کمپلیکس میں مختلف ترقیاتی کاموں کا تعمیراتی کام جاری ہے، جو 2023 کے آخر تک مکمل ہو جائے گا، نیا عظیم الشان اور دیوی کیدار مسلسل تعمیر کیا جا رہا ہے۔ بدری ناتھ دھام کی عظیم الشان تعمیر کا ماسٹر پلان تیار کر لیا گیا ہے۔ حال ہی میں وزیر اعظم نے منا کو ہندوستان کے آخری گاؤں کے بجائے ملک کا پہلا گاؤں قرار دیتے ہوئے ان پر مہر تصدیق ثبت کی ہے کہ اب ان کے لیے بھی سرحدوں پر واقع ہر گاؤں ملک کا پہلا گاؤں ہے۔ یہ ہمارے سرحدی علاقے کے باسیوں کے لیے بھی عزت کی بات ہے۔ وزیر اعلیٰ نے سب کو پکارتے ہوئے کہا کہ ووکل فار لوکل کا ذکر کرتے ہوئے وزیر اعظم نے اہل وطن پر زور دیا ہے کہ وہ جہاں بھی جائیں ایک قرارداد کریں کہ سفر پر خرچ ہونے والی رقم کا کم از کم 5 فیصد وہاں کی مقامی مصنوعات کی خریداری پر خرچ کریں۔ . اس سے ریاست کی مصنوعات کو فروغ دینے کے ساتھ ساتھ ملک اور دنیا میں اپنی شناخت بھی بنے گی۔ ہماری ثقافت کو پہچان دینے کا کام بھی وزیراعظم نے کیا ہے۔ وزیر اعلیٰ پشکر سنگھ دھامی نے کہا کہ جہاں وزیر اعظم کی کامیاب قیادت میں پورا ملک ترقی کر رہا ہے، وہیں اتراکھنڈ سے ان کا خصوصی لگاؤ ​​کسی سے پوشیدہ نہیں ہے۔ ہماری حکومت ریاست کی ثقافتی ترقی کے لیے بھی بہت سے اقدامات کر رہی ہے۔ اتراکھنڈ کی نئی فلم پالیسی کے تحت ہم نے گڑھوال، کمونی اور جونسری میں فلم بنانے کے لیے 2 کروڑ روپے کا انتظام کیا ہے۔ ہم زبان اور ثقافت کو آگے بڑھانے کے لیے ایسی بہت سی اسکیمیں لائے ہیں۔ پروگرام میں مختلف گلوکاروں بشمول جگر سمراٹ پدم شری ڈاکٹر پریتم بھارتوان، مشہور لوک گلوکار شری نریندر سنگھ نیگی، محترمہ مینا رانا اور محترمہ سنگیتا دھونڈیال نے اپنی پرفارمنس دی۔ اس موقع پر کابینہ وزیر شری چندن رام داس، ایم ایل اے شری ونود چمولی، میئر دہرادون شری سنیل یونیال گاما اور دیگر معززین موجود تھے۔