شملہ میں منیش سسوڈیا کے پروگرام میں بہت ہنگامہ، بھڑک اٹھا آپ کارکنان کا غصہ

شملہ۔ ہماچل پردیش کے شملہ میں دہلی کے نائب وزیر اعلی اور عام آدمی پارٹی کے لیڈر منیش سسودیا کے پروگرام میں کافی ہنگامہ ہوا۔ آپ کو بتا دیں کہ عام آدمی پارٹی کے کارکن منیش سسودیا سے ملنا چاہتے تھے لیکن انہیں منیش سسودیا سے ملنے نہیں دیا جا رہا تھا۔ جس کے بعد پارٹی کارکن مشتعل ہوگئے اور ہنگامہ آرائی کی۔ پارٹی کارکنوں نے یہاں تک الزام لگایا کہ عام آدمی پارٹی بدعنوان لوگوں کو ترجیح دے رہی ہے۔ ہماچل میں اس سال کے آخر میں اسمبلی انتخابات ہونے والے ہیں۔ ایسے میں تمام سیاسی جماعتیں اپنی اپنی حکمت عملی بنانے میں مصروف ہیں۔ جس کے لیے وہ مسلسل ہماچل پردیش کا دورہ کر رہے ہیں۔ اسی سلسلے میں عام آدمی پارٹی کے لیڈر منیش سسودیا بھی شملہ پہنچے، جہاں پارٹی کارکنوں نے ان کا پرتپاک استقبال کیا۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق پارٹی کے ایک کارکن نے الزام لگایا کہ عام آدمی پارٹی میں بدعنوان لوگوں کو ترجیح دی جارہی ہے، پارٹی بنانے والوں پر توجہ نہیں دی جارہی ہے۔ تاہم ہنگامہ کے وقت منیش سسودیا پروگرام چھوڑ کر چلے گئے تھے۔ لیکن یہ الزام لگایا جا رہا ہے کہ منیش سسودیا پارٹی کارکنوں سے نہیں مل رہے ہیں۔ منیش سسودیا نے جئے رام ٹھاکر حکومت کو نشانہ بناتے ہوئے الزام لگایا کہ ریاست میں تعلیمی نظام تباہ ہو رہا ہے۔ اس کے ساتھ انہوں نے دعویٰ کیا کہ ان کی پارٹی معیاری تعلیم پر یقین رکھتی ہے، جب کہ بی جے پی فسادات کی سیاست کرتی ہے۔ منیش سسودیا نے کہا کہ ریاست میں تعلیمی نظام تباہ ہو رہا ہے جہاں سرکاری اسکولوں میں بنیادی ڈھانچہ اور معیاری تعلیم نہیں ہے، جب کہ پرائیویٹ اسکولوں میں فیس بہت زیادہ ہے کیونکہ ریاستی حکومت نے انہیں لوگوں کو لوٹنے کی آزادی دے رکھی ہے۔