سیکرٹری زراعت کی زیر صدارت جائزہ اجلاس منعقد ہوا۔

سکریٹری، زراعت جناب شیلیش بگولی کی صدارت میں جمعہ کو ایک جائزہ میٹنگ منعقد ہوئی۔ یہ میٹنگ ریاست کے کسانوں کے لیے ایک مناسب پیداواری منصوبہ تیار کرنے کے ساتھ ساتھ ریاست کی یونیورسٹیوں کے ساتھ زراعت اور دیگر سطری محکموں کے درمیان تال میل کرتے ہوئے پیدا ہونے والی زرعی پیداوار کی مارکیٹنگ کے لیے ایک ٹھوس ایکشن پلان تیار کرنے کے لیے بلائی گئی تھی۔ سیکرٹری زراعت کی طرف سے ہدایت کی گئی کہ ایکشن پلان میں مختلف دیہاتوں سے کسانوں کی پیداوار اکٹھی کرکے سڑک پر لانے اور سڑک کے کنارے ذخیرہ کرنے کے انتظامات کئے جائیں۔ سیکرٹری زراعت کی جانب سے ڈائریکٹر منڈی کو مارکیٹنگ کے لیے نوڈل افسر کے طور پر نامزد کرتے ہوئے ہدایت کی گئی کہ ان کی قیادت میں تمام اضلاع میں ریاستی اور ضلعی سطح کی کمیٹی تشکیل دی جائے، تاکہ زراعت سمیت تمام خطی محکموں کے نمائندے شامل ہوں۔ پارکس اور ریاست کے تینوں زرعی اداروں پنت نگر بھرسر اور الموڑہ کے نمائندے بھی شامل تھے۔ میٹنگ میں پنت نگر زرعی یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر شکلا نے ہر ضلع کے لیے فصل کی نشاندہی کرنے اور اس کی پیداوار کا ہدف مقرر کرنے پر زور دیا۔ ڈائرکٹر ریسرچ پنت نگر یونیورسٹی نے یونیورسٹی کی کامیابیوں اور ریاست میں یونیورسٹی کے تعاون کے بارے میں جانکاری دی۔ ڈائرکٹر منڈی نے ریاست کی روایتی فصلوں کی خصوصیت والی آرگینک پیداوار کو جمع کرنے کے بارے میں بتایا اور کسانوں کو حاصل ہونے والے فوائد کے بارے میں بتایا۔
ایڈیشنل سکریٹری زراعت نے پنت نگر یونیورسٹی اور محکمہ زراعت کے ذریعہ کسانوں کی آمدنی کو دوگنا کرنے کے منصوبے کے بارے میں جانکاری دی۔