اشوک گہلوت نے کہا-بھارت جوڑو یاترا سے بھٹک گئی بی جے پی، سوشل میڈیا پر سازش بے نقاب

راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے آج راہل گاندھی کا دفاع کیا ہے۔ درحقیقت راہل گاندھی کے ویر ساورکر کے بارے میں بیان کے بعد بی جے پی ان پر زبردست حملہ کر رہی ہے۔ اس سب کے درمیان راجستھان کے وزیر اعلی اشوک گہلوت نے صاف کہہ دیا کہ راہل گاندھی نے وہی کہا جو تاریخ میں لکھا ہے۔ اس کے ساتھ انہوں نے دعویٰ کیا کہ کانگریس کی بھارت جوڑو یاترا نے بی جے پی کا دھیان بھٹکا دیا ہے۔ اپنے بیان میں اشوک گہلوت نے کہا کہ وہ (بی جے پی) کچھ بھی کہہ سکتے ہیں۔ سوشل میڈیا پر رچی جانے والی سازشیں بے نقاب ہو چکی ہیں۔ بی جے پی بھارت جوڑو یاترا سے بھٹک رہی ہے… تاریخ میں لکھا ہے، دیکھیں سچ سامنے آئے گا۔ اس سے قبل، پارٹی کے مواصلاتی جنرل سکریٹری جے رام رمیش نے کہا تھا کہ انہوں نے ہندوتوا کے نظریاتی ونائک دامودر ساورکر کو نشانہ نہیں بنایا تھا بلکہ صرف “تاریخی حقائق” کو سامنے رکھا تھا۔ جے رام رمیش نے کہا کہ گاندھی نے ساورکر کا تذکرہ قبائلی رہنما برسا منڈا کے (تقابلی) تناظر میں کیا تھا کہ کس طرح منڈا نے برطانوی حکومت کے سامنے سر نہیں جھکایا اور ساورکر نے رحم کی درخواست پر دستخط کیے یہ حقیقت ہے۔ چھتیس گڑھ کے وزیر اعلی بھوپیش بگھیل نے کہا تھا کہ اگر ساورکر کو دیکھنا ہے تو انہیں دو حصوں میں دیکھنا پڑے گا۔ ساورکر جیل جانے سے پہلے انقلابی تھے اور اس کے بعد وہ معافی مانگتے رہے۔ انہوں نے انگلینڈ اور پھر یہاں آنے کے بعد انقلابی قدم اٹھائے لیکن جیل جانے کے بعد ان کا نقطہ نظر بالکل بدل گیا۔ دوسری طرف راہل کے بیان کے بعد بی جے پی کانگریس پر حملہ کر رہی ہے۔ مدھیہ پردیش کے وزیر اعلی شیوراج سنگھ چوہان نے کہا کہ ملک ویر ساورکر کی توہین برداشت نہیں کرے گا۔ کانگریس نے صرف ایک خاندان یعنی نہرو خاندان پر توجہ مرکوز کی ہے۔ مرکزی وزیر انوراگ ٹھاکر نے کہا کہ راہل گاندھی جو ٹکڑے ٹکڑے گینگ کے ساتھ گھومتے تھے، ہندو دہشت گردی کی بات کرتے تھے، کبھی جے این یو میں ہندوستان کے ٹکڑے کرنے والوں کے ساتھ کھڑے تھے، اب وہ ویر ساورکر پر حملہ کررہے ہیں، سوالات اٹھا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ کانگریس کی ذہنیت ہے، وہ ایک خاندان سے آگے کچھ نہیں دیکھ پائی ہے اور نہ ہی کچھ دیکھ پائے گی۔

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *